علاج کے باوجود چھاتی کا کینسر ختم نہیں ہوتا

لندن: سائنسدانوں کی ایک حالیہ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ چھاتی کا سرطان کامیاب علاج کے 15 سال بعد بھی مرض دوبارہ نمودار ہو سکتا ہے، ماہرین کے مطابق جن خواتین میں بریسٹ کینسر کی سطح زیادہ ہوتی ہے، ایسی خواتین کا کامیاب علاج ہونے کے باوجود 15 سال بعد ان میں بریسٹ کینسر کے اثرات واپس آجاتے ہیں، اس تحقیق میں 20 سال کے عرصے تک 63 ہزار ایسی خواتین کی صحت اور علاج کا جائزہ کیا گیا، جن کو چھاتی کے سرطان کی سب سے عام قسم کی تشخیص ہوئی تھی۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی ماہرین کی ایک حالیہ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ چھاتی کا کینسر علاج کے باوجود ختم نہیں ہوتا، تحقیق کے لیے ماہرین کی ایک ٹیم نے بریسٹ کینسر کا علاج کروانے والی 63 ہزار خواتین کے ڈیٹا کا جائزہ لیا، یہ وہ خواتین تھیں جنہوں نے مسلسل 5 سال تک ہارمون تھراپی کے بعد بریسٹ کینسر سے نجات حاصل کرلی تھیں، اور بعد میں کوئی میڈیسن یا علاج نہیں کروایا،جائزے سے پتہ چلا کہ کامیاب علاج کروانے والی خواتین میں بھی بریسٹ کینسر کے اثرات پیدا ہونا شروع ہوگئے تھے، یا پیدا ہونے کے امکانات موجود تھے۔