اسلام آبادہائیکورٹ نے انتخابی اصلاحات بل 2017معطل کر دیا

اسلام آباد:اسلام آباد ہائیکورٹ نے انتخابی اصلاحات بل 2017 کو آئندہ سماعت تک معطل کر دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں انتخابی اصلاحات بل 2017کیخلاف مولانا اللہ وسایا کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت ہوئی،اسلام آبادہائیکورٹ کے سنگل رکنی بنچ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے مقدے کی سماعت کی ۔دوران سماعت حافظ عرفات ایڈووکیٹ اور درخواست گذار کے وکیل طارق اسد ایڈووکیٹ پیش ہوئے،درخواست گزار کے وکلا نے موقف اختیار کیا کہ انتخابی اصلاحات بل میں ختم نبوت سے متعلق شق میں ختم کی گئیں ،عدالت سے استدعا ہے کہ ختم نبوت سے متعلق اس قانون کو کالعدم قراردیا جائے۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے الیکشن ایکٹ2017 کو معطل کرتے ہوئے ریمارکس میں کہا کہ یہ بہت حساس معاملہ ہے،کوئی غلط آرڈر پاس نہیں کروں گا،کیاپارلیمنٹ آرٹیکل9 کو معطل کر سکتی ہے ،اس قانون کے تحت انتخابات نہیں ہونے دیں گے ،عدالت نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے حکومت سے 2 ہفتے میں انکوائری رپورٹ طلب کر لیا۔واضح رہے کہ قومی اسمبلی نے انتخابی اصلاحات کے بل 2017 کی کثرت رائے سے منظوری دی تھی۔