مقبول خبریں

روہنگیا خواتین کو بنگلہ دیش میں جسم فروشی پر مجبور کیے جانے کا انکشاف

ڈھاکا: میانمار میں حکومتی و فوجی ظلم سے تنگ آکر پڑوسی ملک بنگلہ دیش میں پناہ لینے والے روہنگیا مسلمانوں کے دکھ کم ہونے کے بجائے مزید بڑھ گئے، ایک حالیہ عالمی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق بنگلہ دیش پہنچنے والی روہنگیا مسلمان خواتین کو مقامی لوگ جھوٹ اور سہانے سپنے دکھانے کے بہانے جسم فروشی پر مجبور کر رہے ہیں، جب کہ بنگلہ دیش کی حکومت بھی اس حوالے سے کوئی حکمت عملی بنانے میں ناکام نظر آتی ہے، دوسری جانب اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ اگست سے لے کر اب تک میانمار چھوڑنے والے پانچ لاکھ کے قریب روہنگیا پناہ گزینوں کو بنگلہ دیش میں شدید خطرات لاحق ہیں۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی نے بنگلہ دیش پہنچنے والی روہنگیا خواتین مسلمانوں سے بات کی، جن میں زیادہ تر نوجوان روہنگیا خواتین تھیں، جنہوں نے میڈیا سے اکیلے میں بات کرنے کے دوران اس بات کا انکشاف کیا کہ انہیں سہانے سپنے دکھانے کے بعد ریلیف کیمپوں سے نکال کر مقامی لوگ گھروں میں لے کر آئے، جہاں ان سے جسم فروشی کرنے کو کہا گیا، دوسری جانب بنگلہ دیش کی حکومت نے ایسے انکشافات کے بعد بھی کوئی بیان جاری نہیں کیا، علاوہ ازیں اقوام متحدہ نے بنگلہ دیش میں روہنگیا مسلمانوں کو شدید خطرات لاحق ہونے سے متعلق خبردار کیا ہے۔