فضائی آلودگی مردانہ بانجھ پن کا سبب

بیجنگ: ایک حالیہ چینی تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ فضائی آلودگی نہ صرف قبل ازاموات اور دل کی بیماریوں سمیت دیگر جان لیوا امراض کا باعث بنتی ہے، بلکہ یہ مردوں کے بانجھ پن کا بھی بڑا سبب ہے، ماہرین کے مطابق فضائی آلودگی سے نہ صرف مردوں کے اسپرم کے سائز اور شکل میں فرق پڑ رہا ہے، بلکہ اس سے مرد حضرات بانجھ پن کا شکار بھی ہو رہے ہیں، چینی سائنسدانوں نے رپورٹ میں کہا کہ بانجھ پن سے بچنے کے لیے مرد حضرات جہاں ورزش اور اپنی غذا سمیت علاج پر مکمل دھیان دیتے ہیں، وہیں وہ خاموشی سے فضائی آلودگی کا شکار بن رہے ہیں، رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جتنے زیادہ عرصے تک مرد فضائی آلودگی میں سانس لیتے رہیں گے، اتنی تیزی سے ان کے اسپرم کی سائز اور شکل میں کمی اور تبدیلی ہوگی، جو بالآخر بانجھ پن کا باعث بنتی ہے۔
تفصیلات کے مطابق ایک حالیہ چینی تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ فضائی آلودگی نہ صرف قبل ازاموات اور دل کی بیماریوں سمیت دیگر جان لیوا امراض کا باعث بنتی ہے، بلکہ یہ مردوں کے بانجھ پن کا بھی بڑا سبب ہے، سائنس جرنل میں شائع رپورٹ کے مطابق چائنیز یونیورسٹی آف ہانگ کانگ کے ماہرین کی ٹیم نے پروفیسر شیانگ چانگ لاؤ کی سربراہی میں 6 ہزار 475 مرد حضرات کے اسپرم کے ڈیٹا کا جائزہ لیا، ماہرین نے فضائی آلودگی میں موجود ’پی ایم ٹو پوائنٹ فائیو‘ (PM2.5)آلودگی کے انسانی اسپرم اور بانجھ پن کے اثرات کا جائزہ لیا، آلودگی کی یہ قسم زیادہ تر پاور پلانٹس، تعمیر ہونے والی عمارتوں، کاروں کے دھویں، بھٹوں، کچرہ جلائے جانے اور اسی طرح کے دیگر ذرائع سے پیدا ہوتی ہے، رپورٹ کے مطابق فضا میں موجود آلودگی کی یہ قسم انتہائی خطرناک ہوتی ہے، کیوں کہ اس کی موٹائی انسانی بال سے بھی 30 فیصد باریک ہوتی ہے،تحقیق کے مطابق فضائی آلودگی سے نہ صرف مردوں کے اسپرم کے سائز اور شکل میں فرق پڑ رہا ہے، بلکہ اس سے مرد حضرات بانجھ پن کا شکار بھی ہو رہے ہیں۔