شام میں خواتین کی پیدل کے بجائے سائیکل پر میراتھن ریس

حلب: ویسے تو ان دنوں شام خانہ جنگی کا شکار ہے، جہاں سے کوئی اچھی خبر مشکل سے ہی آتی ہے، تاہم شامی خواتین نے خانہ جنگی کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے اپنے حقوق کے لیے منفرد میراتھن ریس کا اہتمام کیا، میراتھن ریس میں خواتین نے پیدل دوڑنے کے بجائے سائیکل پر سواری کرکے حصہ لیا، خواتین نے دراصل اپنے حقوق کیلئے آواز بلند کرنے اور ہراساں کئے جانے کے خلاف اس ریس کا اہتمام کیا اور  سینکڑوں خواتین سائیکل چلاتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئیں ۔

تفصیلات کے مطابق شام میں خواتین نے اپنے حقوق کے لیے پیدل دوڑنے کے بجائے سائیکل چلا کر میراتھن ریس کا انعقاد کیا، غیر ملکی میڈیا کے مطابق ان خواتین نے ہیلمٹس پہن کر سائیکلیں چلائیں اور میراتھن میں حصہ لیاجبکہ ان کا مطالبہ خواتین کو ہراساں کرنے کا خاتمہ اور ان کے حقوق کا تحفظ تھا، اس مہم میں لگ بھگ3 سو سے زائد خواتین نے حصہ لیا، جنہوں نے بینر اور مائیک اُٹھایا ہوا تھا اور یہ پیغام عام کر رہی تھیں کہ انہیں ہراساں کرنا بند کیا جائے ، وہ سائیکل چلانا نہیں روک سکتیں، اس مہم کیلئے خواتین کی یہ سائیکل میراتھن کئی کلو میٹر تک جاری رہی، جس میں سینکڑوں خواتین نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔