سعودی حکومت کرپشن کے الزام میں گرفتار شہزادوں سے ڈیل کرنے کے لیے تیار

ریاض: سعودی عرب کی حکومت کرپشن کیس میں گرفتار کیے گئے شہزادوں سے مشروط ڈیل کرنے پر رضامند ہوگئی، جس کے بعد خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ جلد ہی کرپشن کے الزام میں گرفتار شہزادوں کو رہا کیا جائے گا، سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوٹر سعود المعجب کا کہنا ہے کہ  بیشتر افراد معاملہ نمٹانے پر راضی ہوچکے ہیں اور اس سلسلے میں ضروری کارروائی عمل میں لائی جارہی ہے، ان کا کہنا تھا کہ زیرِ حراست افراد کے خلاف کارروائی کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے، پہلے مرحلے میں جو لوگ لوٹی ہوئی قومی دولت واپس کرنے پر رضا مند ہیں، ان کی رہائی عمل میں لائی جارہی ہے جبکہ جو افراد تصفیے پر تیار نہیں ان کے خلاف مقدمہ چلایا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کی حکومت کرپشن کیس میں گرفتار کیے گئے شہزادوں سے مشروط ڈیل کرنے پر رضامند ہوگئی،غیر ملکی خبر رساں اداروں کے مطابق سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوٹر سعود المعجب نے سعودی حکومت کی جانب سے ڈیل کی رضامندی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ کرپشن کے خلاف قائم کیے گئے کمیشن نے 320 افراد کو معلومات فراہم کرنے کی پیشکش کی، جبکہ 159 افراد زیر حراست رہیں گے، جن میں سے متعدد کو مقدمے کی کارروائی کے لیے پبلک پراسیکیوشن کے سپرد کردیا گیا، خیال رہے کہ گذشتہ ماہ کے آخر میں کرپشن کے الزام میں گرفتار سعودی عرب کے سابق فرماں روا شاہ  عبداللہ کے صاحبزادے شہزادہ مطعب کو بھی ایک ڈیل کے بعد رہا کردیا گیا تھا۔