ٹرمپ کے فیصلے نے جہنم کے دروازے کھول دیے ہیں، حماس

FILE - In this Wednesday, Aug. 27, 2014 file photo, Palestinian top Hamas leader in Gaza, Ismail Haniyeh, gives a speech during a rally in Gaza City. Israel and the Gaza Strip are bound by much more than enmity: Israel controls nearly everything that comes in and out of the territory, including food and energy, and sometimes allows Gazans to enter the country for medical care. But following a bloody 50-day war over the summer, a decision to allow the young daughter of a top Hamas official to receive care at an Israeli hospital is proving to be too much for some Israelis. The treatment of Ismail Haniyeh’s daughter in October, 2014 has sparked a debate over whether Israel’s stated commitment to providing humanitarian aid should be extended to its bitterest enemies. (AP Photo/Khalil Hamra, File)

بیت المقدس :فلسطینی تنظیم حماس نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے نے جہنم کے دروازے کھول دیے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرئیل کا دارالحکومت تسلیم کیے جانے کے بعد مختلف ممالک اور تنظیموں کی جانب سے درعمل سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں۔فلسطینی تنظیم حماس کی جانب سے ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ٹرمپ کے فیصلے نے جہنم کے دروازے کھول دیے ہیں۔فلیسطین لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کے فیصلے سے دو ریاستی حل تباہ ہو گیا ہے،پی ایل او کے مذاکرات نے کہا کہ ٹرمپ نے امریکا کو مستقبل میں کسی بھی امن عمل کے لیے نااہل کر دیا ہے،فلسیطینی صدر محمود عباس نے کہا کہ امریکا کا فیصلہ خطے کے امن کے لیے نقصان دہ ہے۔واضح رہے کہ گذشتہ روزواشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے امریکی صدرنے مقبوضہ بیت المقدس کواسرائیل کادارالحکومت تسلیم کرلیا۔