انسداد دہشت گردی مقدمات؛ عمران خان کی عبوری ضمانت میں 11دسمبرتک توسیع

اسلام آباد:انسداد دہشت گردی کی عدالت نے پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ ، ایس ایس پی تشدد اورکار سرکار میں مداخلت مقدمات میں عمران خان کی عبوری ضمانت میں 11دسمبرتک توسیع کردی ۔تفصیلات کے مطابق اسلام آبادانسداد دہشت گردی عدالت میں عمران خان کیخلاف پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ ، ایس ایس پی تشدد اورکار سرکار میں مداخلت کیسز کی سماعت ہوئی،اے ٹی سی کے جج شاہ رخ ارجمندنے مقدمات کی سماعت کی،چیئرمین تحریک انصاف اپنے وکیل بابر اعوان کے ساتھ عدالت میں پیش ہوئے۔دوران سماعت عمران خان کے وکیل بابرا عوان نے درخواست میں مقدمات میں دہشت گردی کی دفعات کوچیلنج کرتے ہوئے کہا کہ کیاحقوق کیلئے احتجاج کرنادہشت گردی ہے؟،عمران خان نے اپنی سیاسی جماعت کے ہمراہ مطالبات کیلئے احتجاج کیا،ان کا کہناتھا کہ فیض آباددھرنے میں حکومت نے معاہدہ کرکے دہشت گردی کے مقدمات ختم کئے،مقدمے کوسیشن کورٹ بھجوایاجائے۔پراسیکیوٹرنے مقدمات سیشن کورٹ بھجوانے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ مقدمات دہشت گردی کی تعریف پرپورے اترتے ہیں،چیئرمین پی ٹی آئی نے کارکنوں کوتشدد اور املاک پرحملے کےلئے اکسایا،عمران خان نے کہاکہ آئی جی کومارو اوروزیراعظم ہاؤس پرقبضہ کرو،پراسیکیوٹرکا کہناتھا کہ عمران خان کیخلاف کارکنوں کوتشددپراکسانے کے ٹھوس شواہدموجودہیں،عمران خان پر انسداددہشت گردی ایکٹ کی 10دفعات کااطلاق ہوتاہے۔عدالت نے پارلیمنٹ حملہ سمیت چاروں مقدمات میں عمران خان کی عبوری ضمانت میں 11دسمبرتک توسیع کر دی اورعمران خان کی مقدمہ سیشن کورٹ بھجوانے کی درخواست پرپولیس کونوٹس جاری کرتے ہوئے 11 دسمبرتک جواب طلب کرلیا۔