یروشلم کو اسرائیل کا سفارتخانہ تسلیم کرنے کے امریکی فیصلے پر قومی سلامتی کا اجلاس طلب

نیویارک: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کے سفارتخانے کے طور پر تسلیم کیے جانے پر اقوام متحدہ کی قومی سلامتی کا ہنگامی اجلاس طلب کرلیا گیا، قومی سلامتی کا اجلاس دنیا کے 8 مختلف ممالک کی درخواست پر بلایا جا رہا ہے، فرانس اور برطانیہ سمیت دیگر ممالک کی درخواست پر بلایا گیا ہنگامی اجلاس 8 دسمبر بروز جمعہ کوہوگا، دوسری جانب اقوام متحدہ اور یورپی یونین سمیت برطانیہ نے بھی مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا امریکی اعلان مسترد کردیا

تفصیلات کے مطابق امریکا کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا سفارتخانہ تسلیم کیے جانے کے فیصلے کے بعد فرانس، برطانیہ سویڈن، مصر، سینیگال، بولیویا اور یوراگوائے نے قومی سلامتی کے اجلاس کی حمایت کردی، دوسری جانب یورپی یونین کی جانب سے فیصلے پر تشویش کا اظہار کیا گیا اور کہا کہ  مقبوضہ بیت المقدس کے مستقبل کا فیصلہ بات چیت کے ذریعے نکالنا چاہیے، اسرائیل اور فلسطین دونوں کی خواہشات پوری ہونی چاہئیں، برطانوی وزیراعظم ٹریسامے نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی فیصلے کی مذمت کی اور کہا کہ یہ اقدام امن عمل میں مددگار نہیں ہوگا۔