وزیراعظم عمران خان کے قریبی دوست فراڈ کے الزام میں گرفتار

وزیراعظم عمران خان کے قریبی دوست اور ” ابراج کیپٹل لیمیٹڈ “ کے بانی عارف نقوی کو میٹروپول پولیس نے برطانیہ  اور ان کے منیجنگ پارٹنر عبد الودود کو سرمایہ کاروں کے ساتھ فراڈ کے الزامات کے تحت امریکہ میں گرفتار کر لیا ہے ۔

ہیلتھ فنڈ میں خرد برد اور سرمایہ کاروں سے فراڈ کے الزامات  پرابراج گروپ کے بانی اور سابق چیف ایگزیکٹو آفیسر عارف نقوی کو  لندن میں گرفتارکرلیا گیا ہے،عارف نقوی کو امریکا منتقل کیےجانےکاامکان ہے جبکہ عارف نقوی کے پارٹنر مصطفیٰ عبد الودود کو بھی انٹر پول نے امریکہ سے حراست میں  لے لیا ہے۔

امریکہ کے فیڈرل پراسیکیوٹر کے مطابق  فراڈ کا شکار ہونے والے متاثرہ افراد کی فہرست میں مائیکروسافٹ کے سربراہ بل گیٹس کی فاونڈیشن کا نام بھی شامل ہے ۔مصطفیٰ عبدالودود کو  گذشتہ روز امریکہ کی فیڈرل کورٹ میں پیش کیا گیا ،عدالت میں سماعت کے موقع پر امریکہ اسسٹنٹ اٹارنی اینڈ ریاگر یسوالڈ نے بتایا کہ ابراج کے چیف ایگزیکٹو عارف نقوی کو جمعہ کے روز  برطانیہ سے جبکہ ان کے منیجنگ پارٹنر مصطفیٰ عبدالودود کو گذشتہ روز نیویارک کے ایک ہوٹل سے حراست میں لیا گیاہے ۔

منیجنگ پارٹنر عبدالودود نے عدالت میں سماعت کے موقع پر الزامت کی صحت سے انکار کر دیاہے جبکہ دوسری جانب ان کے وکیل کی جانب سے بھی ابھی ضمانت کیلئے درخواست دائر نہیں کی گئی ہے ۔

پراسیکیورٹر نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ 2014 سے کمپنی کے دیوالیہ ہونے تک عارف نقوی اور عبدالودود ابراج کے فنڈز کی کارکردگی کے بارے میں جھوٹ بولتے رہے اور ان کی مالیت میں 50کروڑڈالر سے زائد کی کمی ہوئی۔

پراسیکیوٹر نے کہا کہ نقوی اور عبدالودود دونوں نے ذاتی فائدے اور دیگر مقاصد کے حصول کے لیے سرمایہ کاروں کے فنڈز کو کروڑوں اربوں ڈالر کا نقصان پہنچایا۔گرس وولڈ نے کہا کہ ابراج سرمایہ کاری کے سرخیل کی حیثیت سے اپنا تعارف کراتے ہیں لیکن وہ دراصل وہ بھاری فراڈ میں ملوث ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.