بھارت میں مسلمان، عیسائی اور دلتوں میں خوف وہراس

انتہا پسند اور تنگ نظر مودی کا ٹولہ پھر سے اقتدار میں آ گیا ہے ۔ مسلمانوں سمیت دوسری اقلیتوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے ۔ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم اور نہتے عوام بھی خوفزدہ ہیں کہ ان پر ظلم و ستم کی مزید نئی نئی کہانیاں لکھی جائیں گی۔

بھارت میں ایک بار پھر اقتدار ،انتہا پسند اور تشدد پر یقین رکھنے والی مودی سرکار کے ہاتھوں میں آ گیا ہے جہاں پھرخوف اور دہشت کی وہ کہانیاں لکھی جائیں گی  جنہیں سن کر ہی روح کانپ جائے۔

مسلمانوں پر بھی زمین مزید تنگ کی جائے گی اور ان کے خلاف گھیرا تنگ کیا جائے گا ۔نفرت اور تعصب کی دیوار اور بلند کی جائے گی ۔ گاؤں رکھشک کے نام پر بے قصور اور نہتے مسلمانوں کا خون بہایا جائے گا ۔ان کی املاک کو نقصان پہنچایا جائے گا۔

مودی سرکار اب مسلمانوں پر دروازے بندکرے گی اوربنگلہ دیش یا میانمار سے آئے پناہ گزینوں کو ملک سے باہر نکال پھینکے گی۔ریاستی دہشت گردی کا بدترین مظاہرہ مقبوضہ کشمیر میں بھی دیکھنے کو ملے گا چادر اور چار دیواری کا تقدس مودی کے درندہ بنے اہلکار پامال کریں گے۔

جعلی آپریشن کے نام پر کشمیری نوجوانوں کو بے دردی سے شہیدکیاجائے گا۔صرف ایک بھارتی مسلمان ہی نہیں دوسری اقلیت بھی عجیب و غریب خوف و ہراس کا شکار ہے ۔

بھارت میں رہنے والے مسلمان اور عیسائی سہمے ہوئے ہیں کہ بھارتیا جنتا پارٹی کے غنڈے اب ان کی عبادت گاہوں پر حملے کریں گے ۔ ظلم اور بربریت کا وہ سورج طلوع ہوگا جو مودی کے اقتدار سے رخصت ہونے پر ہی غروب ہو گا۔

تبصرے بند ہیں.