بریگزیٹ ڈیل میں ناکامی۔برطانوی وزیراعظم کا مستعفی ہونے کا اعلان

برطانوی وزیراعظم تھریسامے نے ڈاؤننگ اسٹریٹ سے قوم سے خطاب کرتے ہوئے نے کہا کہ وہ بطور کنزرویٹو پارٹی لیڈر 7 جون کو استغفیٰ دے دیں گی۔

ٹریسا مئے نے کہا کہ انھوں نے 2016 کے بریگزیٹ ریفرنڈم کو اہمیت دینے کے لیے پوری کوشش کی۔

ٹریسا مئے نے جذباتی لہجے میں کہا کہ انھیں اس بات کا شدید افسوس رہے گا کہ وہ بریگزٹ کو لاگو کرانے میں ناکام رہیں۔انھوں نے کہا کہ اس وقت ایک نیا وزیر اعظم ہی ملکی مفاد میں ہے۔

اپنے خطاب کے آخر میں انتہائی جذباتی انداز میں انہوں نے کہا کہ بطور وزیر اعظم کام کرنا ان کے لیے باعث عزت ہے۔

ٹریسا مئے بطور وزیراعظم تین جون سے شروع ہونے والے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سرکاری دورہ کی میزبانی کریں گی جس کے بعد 7 جون کو وہ عہدے سے مستعفی ہوجائیں گی۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق دس جون سے کنزرویٹیو پارٹی کے نئے لیڈر کے انتخاب کے لئے باقاعدہ عمل شروع ہوگا۔

ٹریسا مئے پارلیمنٹ میں بریگزٹ پلان کی ناکامی کے بعد دباؤ کا شکار تھیں جس کے باعث وہ مستعفی ہونے کا فیصلہ کرچکی تھیں۔

یاد رہے کہ جون 2016 میں ہونے والے ریفرنڈم میں 52 فیصد برطانوی عوام نے یورپی یونین سے الگ ہونے کے حق میں ووٹ دیا تھا جبکہ مخالفت میں 48 فیصد ووٹ پڑے تھے۔

تبصرے بند ہیں.