آسٹریلیا کو ہرا کر انگلینڈ ورلڈکپ کے فائنل میں پہنچ گیا

انگلینڈ آسٹریلیا کو شکست دے کر فائنل میں پہنچ گیا، دفاعی چیمپئن کو انگلینڈ کے ہاتھوں دوسرے سیمی فائنل میں 8 وکٹوں سے شکست دیدی۔

برمنگھم میں کھیلے گئے میچ میں ہاٹ فیورٹ انگلینڈ نے آسٹریلیا کو چاروں شانے چت کرتے ہوئے 27 سال بعد عالمی کپ کے فائنل کا ٹکٹ کٹا لیا،انگلینڈ اور نیوزی لینڈ اتوار کو ٹرافی کے قبضے کی جنگ لڑیں گے، دونوں ٹیمیں ایک بار بھی عالمی کپ نہیں جیت سکیں جب کہ انگلش ٹیم 40 سال بعد اپنی سرزمین پر ورلڈکپ کا فائنل کھیلے گی۔

تفصیلات کے مطابق آئی سی سی ورلڈ کپ 2019ءکے دوسرے سیمی فائنل میں میزبان انگلینڈ نے دفاعی انگلینڈ نے آسٹریلیا کی جانب سے دیے گئے 224 رنز کا ہدف 2 وکٹوں کے نقصان پر 32 ویں اوور میں حاصل کر لیا۔ انگلینڈ کی جانب سے جیسن روئے 85 رنز بنا کر نمایاں رہے۔کرس ووکس کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

ہدف کے تعاقب میں جونی بیرسٹو اور جیسن روئے پر مشتمل اوپننگ جوڑی نے جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 124 رنز کا اوپننگ اسٹینڈ فراہم کیا، دونوں بلے بازوں نے وکٹ کے چاروں جانب شاندار اسٹروکس کھیل کر حریف بولرز پر اپنی دھاگ بٹھائی، اس دوران جیسن روئے نے اسمتھ کو 3 لگاتار چھکے بھی لگائے اور نصف سنچری اسکور کی۔
انگلینڈ کی پہلی وکٹ جونی بیرسٹو کی صورت میں گری جو 34 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جب کہ جیسن روئے 85 رنز پر کیچ آؤٹ ہوئے۔ان کی اننگز میں 5 چھکے اور 9 چوکے شامل تھے۔

 

147 رنز پر دوسری وکٹ گرنے کے بعد تجربہ کار جوئے روٹ اور کپتان مورگن نے تیز رفتاری سے رنز بنانے کے سلسلے کو برقرار رکھتے ہوئے جارحانہ بیٹنگ کی اور 33 ویں اوور میں 224 رنز کا ہدف حاصل کرلیا، جوئے روٹ اور مورگن 33،33 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے۔

ایونٹ میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے مچل اسٹارک بھی ہدف کا دفاع کرنے میں خاطر خواہ کارکردگی پیش نہ کر سکے البتہ ان کے حصے میں ایک وکٹ آئی جس کے لیے انہیں 64 رنز دینے پڑے جب کہ کمنز نے بھی ایک شکار کیا۔

انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ورلڈکپ کا فائنل 14 جولائی کو لارڈز کے تاریخی میدان پرکھیلا جائے گا۔

ایجبیسٹن گراﺅنڈ،برمنگھم میں آسٹریلوی کپتان ایرون فنچ نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو اچھا ثابت نہ ہوا اور صرف 4 رنز پر وہ خود بغیر کھاتہ کھولے آرچر کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوگئے،10 رنز پر ان فارم بیٹسمین ڈیوڈ وارنر ووکس کی گیند پر بیرسٹو کو کیچ دے بیٹھے۔

نئے آنے والے بیٹسمین پیٹر ہینڈسکومب کو ووکس نے صرف 4 رنز پر پویلین کی راہ دکھائی،اس وقت ٹیم کا اسکور صرف 14 رنز تھا۔

ابتدائی تین وکٹیں جلد گرنے کے بعد اسٹیو سمتھ اور ایلکس کیرے نے ٹیم کو سنبھالا اور چوتھی وکٹ کی شراکت میں 103 رنز کی شاندار شراکت قائم کرکے اسکور 117 تک پہنچایا، اس موقع پر کیرے 46 رنز بناکر عادل رشید کو وکٹ دے بیٹھے،اسی اوور میں عادل رشید نے سٹوئنس کو بغیر کھاتہ کھولے پویلین کی راہ دکھائی۔

میکسویل اور سٹیو سمتھ نے چھٹی وکٹ کے لیے39رنز جوڑے جس کے بعد میکسویل22رنز بنا کر آرچر کا شکار بنے، پیٹ کمنز6رنز بنا کر عادل رشید کا شکار بنے،سٹیو سمتھ85رنز کی عمدہ باری کھیل کر بٹلر کے ہاتھوں رن آﺅٹ ہوئے، مچل اسٹارک بھی29رنز بنا کرپویلین لوٹے۔

واضح رہے کہ آسٹریلیا کی ٹیم سیمی فائنل میں آٹھویں مرتبہ جگہ بنانے میں کامیاب ہوئی ہے اور اب تک 5 مرتبہ ورلڈ چیمپئن کا ٹائٹل اپنے نام کرچکی ہے،انگلش ٹیم چار مرتبہ سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کرچکی ہے لیکن 1992 ءمیں ایک طویل عرصے کے بعد انگلینڈ ٹیم اب فائنل میں پہنچی ہے۔

تبصرے بند ہیں.