صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے بیٹے کو اضافی نمبر دینے کا الزام

بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی نے فزکس کے پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل کے باعث صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے صاحبزادے کا ایف ایس سی کا نتیجہ روک لیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ راولپنڈی بورڈ نے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے بیٹے کا ایف ایس سی کا نتیجہ روک لیا، فیاض الحسن چوہان کے بیٹے فہد حسن کے فزکس کے پریکٹیکل کے نمبر تبدیل کیے گئے تھے جس کے باعث نتیجہ روکا گیا ہے۔ چیئرمین بورڈ کے احکامات پر کنٹرولر امتحانات نے 2 رکنی تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے۔

کنٹرولر امتحانات نے چیئرمین بورڈ آف انٹرمیڈیٹ راولپنڈی کو لکھے گئے اپنے خط میں بتایا کہ فیاض الحسن چوہان کے صاحبزادے فہدحسن کے فزکس کے پریکٹیکل میں 14 نمبر تھے جنہیں تبدیل کرکے 30 کیا گیا۔ امیدوار فہد حسن کے فزکس پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل پر نتیجہ روکا گیا ہے۔

چیئرمین راولپنڈی بورڈ کے مطابق فزکس کے پریکٹیکل 17 جولائی کو ختم ہوئے جبکہ انہوں نے چارج 18 جولائی کو سنبھالا تھا، انہوں نے نتائج میں ردو بدل کا معاملہ نوٹس میں آتے ہی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

چیئرمین راولپنڈی بورڈ کا کہنا ہے کہ بیٹے کے پریکٹیکل کے نمبروں کی تبدیلی پرصوبائی وزیرنے انکوائری کی درخواست دی ۔

فیاض الحسن چوہان نے درخواست میں موقف اپنایا کہ بیٹے کے پریکٹیکل کے نمبرزکی تبدیلی میں ان کا کوئی ہاتھ نہیں  اور جو بھی اس کا ذمے دار ہے اس کے خلاف انکوائری کی جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.