سعودی حکومت نے پاکستان کو اہم پیشکش کردی

 وزیراعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر سعودی عرب پہنچے جہاں سعودی حکومت نے پاکستان کی سیاحت میں اضافے کے لیے اقدامات کی پیشکش کردی جس کے لیے سعودی ٹیم جلد پاکستان کا دورہ کرے گی۔

نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر سعودی عرب پہنچے، انہوں نے مسجد نبوی میں روضہ رسول ﷺ پر حاضری دی اور ملک کی بقا و سلامتی کے لیے دعا کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے سعودی علی عہد محمد بن سلمان سے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے مختلف امور، پاک عرب تعلقات  سمیت خطے کی مجموعی صورتحال پر گفتگو ہوئی۔

جاری کردہ اعلامیے کے مطابق وزیر اعظم نے دونوں ممالک کے درمیان اسٹریٹجک تعلقات کی اہمیت، پاک سعودی تعلقات، خطہ میں امن و استحکام، مشرق وسطی کے تنازعات کو سیاسی اور سفارتی ذرائع سے حل کرنے پر زور دیا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان مشرق وسطی میں تنازعات ختم کرنے اور تناؤ کم کرنے میں کردار ادا کرتا رہے گا، پاکستان خطے اور دنیا کے امن کے لیے تمام تر کوششوں میں مدد فراہم کرتا رہے گا۔

اعلامیے کے مطابق دورے کے دوران سعودی عرب نے پاکستان میں سیاحت کے شعبے کی ترقی میں ہر ممکن تعاون کی پیشکش کی، سیاحت کے فروغ سے متعلق سعودی ٹیم جلد پاکستان کا دورہ کرے گی۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ مئی 2019ء کے بعد وزیر اعظم عمران خان کا سعودی عرب کا یہ چوتھا دورہ تھا، مسلسل روابط اس اسٹریٹجک شراکت داری کی اہمیت کی عکاسی کرتے ہیں، اعلامیہ دونوں ممالک کی قیادت پاکستان سعودی تعلقات کو ایک نئی سطح پر لے جانے کے لیے پرعزم ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے جی 20 کی صدارت ملنے پر سعودی ولی عہد کو مبارکباد دی اور کہا کہ یہ سعودی قیادت کا عالمی کمیونٹی میں کردار کا عکس ہے، ولی عہد محمد بن سلمان کا رواں سال فروری میں دورہ پاکستان انتہائی اہم رہا جس میں سرمایہ کاری، توانائی، سلامتی اور دفاع کے شعبوں میں تعاون کے نئے دور کا آغاز ہوا۔

ملاقات میں رہنماؤں نے دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تعاون پراطمینان کا اظہاراوراتفاق کیا کہ سعودی پاکستان سپریم کوآرڈی نیشن کونسل کے قیام نے باہمی تعاون کو مزید مضبوط کیا اس لیے آئندہ سال کونسل کے دوسرے اجلاس میں کوآرڈی نیشن کو مزید مضبوط بنایا جائے گا۔

 وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان مشرق وسطی میں تنازعات ختم کرنے اور تناؤ کم کرنے میں کردار ادا کرتا رہے گا، پاکستان خطے اور دنیا کے امن کے لیے تمام تر کوششوں میں مدد فراہم کرتا رہے گا۔

عمران خان نے محمد بن سلمان کو مقبوضہ کشمیر کی تازہ صورتحال سے آگاہ کیا اور لائن آف کنٹرول پر جاری بھارتی جارحیت پر بھی اعتماد میں لیا۔

وزیراعظم نے کشمیر پر او آئی سی رابطہ گروپ میں فعال کردار سمیت حمایت پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا، دونوں فریقین نے او آئی سی اور دیگر ذرائع سے کشمیر کاز کو مزید آگے بڑھانے پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

ملاقات کے بعد وزیراعظم عمران وطن واپسی کے لیے روانہ ہوگئے۔ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے وزیراعظم عمران خان کے لیے جذبہ خیر سگالی کا مظاہرہ کیا اورانہیں خصت کرنے ریاض ایئرپورٹ تک آئے۔

تبصرے بند ہیں.