مفرورکی اپیل نہیں سنی جا سکتی۔سپریم کورٹ نے مشرف کی درخواست واپس کردی

پرویز مشرف کی جانب سے خصوصی عدالت کے فیصلے کے خلاف کی جانے والی اپیل سپریم کورٹ نے اعتراض لگا کر واپس کردی۔

پرویزمشرف کے وکیل سلمان صفدرکی جانب سے خصوصی عدالت کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائرکی گئی تھی تاہم سپریم کورٹ نے اسے اعتراض لگا کر واپس کردیا۔

سابق صدر کی درخواست پراعتراض لگایا ہے کہ جب تک وہ سرینڈر نہیں کرتے اس وقت ان کی اپیل کو قبول نہیں کیا جاسکتا۔

پرویز مشرف کے وکیل سلمان صفدر کا کہنا ہے کہ خصوصی عدالت کے فیصلے کے 30 روزکے اندر اپیل کرنا ضروری تھی ، اپیل پراعتراض غیر متوقع نہیں،اس کے خلاف اپیل کریں گے۔

خیال رہے کہ پشاور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس وقار احمد سیٹھ کی سربراہی میں خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کو سنگین غداری کیس میں سزائے موت سنائی تھی۔

جسٹس وقار سیٹھ نے فیصلے میں لکھا تھا کہ اگر پرویز مشرف سزا پر عملدرآمد سے پہلے انتقال کرجائیں تو ان کی میت کو ڈی چوک لایا جائے اور تین روز تک پھانسی پر لٹکایا جائے۔

سابق صدر پرویز مشرف کی جانب سے خصوصی عدالت کے قیام کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی جس پر فیصلہ سناتے ہوئے عدالت عالیہ نے خصوصی عدالت کی تشکیل کو غیر آئینی قرار دیدیا تھا۔

تبصرے بند ہیں.