آسٹریلیا کے متنازع رکن پارلیمان کی نو عمر بیٹی نے اسلام قبول کرلیا

آسٹریلیا کے متنازع رکن پارلیمان جیسن کوسٹیگن کی نوعمر 19 سالہ بیٹی برائنا کوسٹیگن نے اسلام قبول کرنے کے بعد اپنے دوست احمد طہ سے شادی کرلی۔ دونوں کو سڈنی میں کوکین کی فراہمی کے الزامات  کا سامنا ہے۔

لا اسٹوڈنٹ برائنا نے آن لائن اعلان کیا کہ وہ مشرف بہ اسلام ہوچکی ہے اوراپنی غلطیوں پر نادم ہے اور اللہ تعالیٰ سے معافی کی امید رکھتی ہے۔

نومبر 2019ء میں ایک عدالت نے برائنا پر ڈائل اے ڈیلر کوکین سنڈیکیٹ کی ممبر ہونے کا الزام عائد کیا گیا تھا اس کے ساتھ شریک ملزم اور اب مبینہ شوہر 26 سالہ احمد پر جملہ 14 الزامات عائد ہیں۔

برائنا کا باپ جیسن کوسٹیگن خود متنازع شخصیت ہے، برائن کے وکیل نے عدالت میں بحث کے دوران دعویٰ کیا تھاکہ اس کی موکلہ اس سنڈیکیٹ کی سرغنہ نہیں بلکہ وہ کم عمری میں غلط روش پرپڑگئی اور اسے بہتر زندگی کا موقع دیا جانا چاہیے۔ سڈنی منتقلی سے قبل برائنا نے کوئنس لینڈ میں سیاسی سرگرمیوں سے دلچسپی ظاہر کی تھی۔

تبصرے بند ہیں.