ایف اے ٹی ایف کا پاکستانی رپورٹ پر اظہارِ اطمینان

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کی جانب سے منی لانڈرنگ اورٹیررفنانسنگ کے خلاف کیے گئے اقدامات پراطمینان کااظہارکیا ہے، مذاکرات کل تک جاری رہیں گے۔

پاکستان اورایف اے ٹی ایف کے درمیان بیجنگ میں مذاکرات جاری ہے، پاکستان نے ایف اے ٹی ایف حکام کوگزشتہ ساڑھے چارماہ کی پیشرفت سے آگاہ کیا، ٹاسک فورس کووفاقی وزیراقتصادی امورحماداظہرنے بریفنگ دی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی وزیر حماداظہر نے بریفنگ میں بتایا کہ کالعدم تنظیموں پرپابندیاں عائد کی جا چکی ہیں، منی لانڈرنگ روکنے کیلیے ٹھوس اقدامات کیے، ٹیررفنانسنگ کے حوالے سے کیس رجسٹریشن 451 فیصد اضافے کے ساتھ 827 ہوگئی، اس حوالے سے گرفتاریوں کی تعداد 1104 رہی، جو چھ سو ستتر فیصد زیادہ ہے۔

پاکستان نے بتایاکہ ٹیررفنانسنگ کیسزمیں سزائیں دینے کے عمل میں 403 فیصد کے اضافہ ہوا جبکہ 196 سزائیں ہوئیں، ٹیرر فنانسنگ کے کیسز میں اکتیس کروڑ بیالیس لاکھ کی برآمدگی ہوئی اورخیبر پختونخوامیں 387 کیسز رجسٹرڈ ہوئے۔

ایف اے ٹی ایف حکام کا پاکستان کی رپورٹ پراظہاراطمینان کیا،پاکستان اورایف اے ٹی ایف مذاکرات کل تک جاری رہیں گے۔

یاد رہے پاکستان نظرثانی رپورٹ آٹھ جنوری کوایف اےٹی ایف کوبھجوا چکا ہے، جس میں پاکستان کی جانب سے دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے اور اینٹی منی لانڈرنگ روکنے کیلیے ٹھوس اقدامات سے آگاہ کیا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.