امریکی صدرنے عالمی ادارہ صحت کی فنڈنگ بند کرنے کی دھمکی دیدی

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت کی فنڈنگ مستقل بنیادوں پر بند کرنے کی دھمکی دی ہے۔

ڈبلیو ایچ او کے سربراہ کو لکھے گئے خط مٰیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ کورونا کے خلاف30 دنوں میں کوئی بہترلائحہ عمل نہ بنایا تو امریکا نہ صرف ہمیشہ ہمیشہ  کیلیے اپنی فنڈنگ روک دے گا بلکہ وہ اس کا مزید رکن رہنے کے حوالے سے بھی دوبارہ جائزہ لے گا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر ایدہانوم گیبریسوس کو خط لکھا جس میں ان کا کہنا تھا کہ یہ بات واضح ہے کہ ڈبلیو ایچ او کے غلط اقدامات کے باعث کورونا وائرس پھیلا اورپوری دنیا اس کی قیمت ادا کررہی ہے لہذا اب ایک ہی راستہ ہے کہ عالمی ادارہ صحت اپنے آپ کو چین کے تسلط سے آزاد کرے۔

امریکی صدر نے کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ اصلاحات کے لیے عالمی ادارہ صحت سے رابطہ میں ہے لہذا اب اس پرعمل تیزی سے ہونا چاہیے، ہم مزید وقت ضائع نہیں کرسکتے۔

صدر ٹرمپ گزشتہ ماہ عالمی ادارہ صحت کیلیے دینے والے فنڈز معطل کرچکے ہیں۔ ان کا الزام ہے کہ عالمی ادارہ کورونا وائرس کے حوالے سے چین کی غلط معلومات کو فروغ دے رہا ہے۔ دوسری جانب ڈبلیو ایچ او ٹرمپ کے ان الزامات کی تردید کرتا ہے۔

صدر ٹرمپ کہتے ہیں کہ اگرعالمی ادارہ صحت کورونا پر قابو پانے کے لیے اگلے 30 روز میں کوئی پختہ بہتری نہیں دکھاتا تو وہ عارضی طور پر روکی گئی اس کی فنڈنگ کو مستقل طورپرمنجمد کردیں گے۔ اس کے علاوہ امریکا مزید رکن کا بھی دوبارہ جائزہ لے گا۔

ٹرمپ نے اپنے خط میں کہا کہ آپ کی  اور آپ کے ادارے کی جانب سے وبا پر قابو پانے کے لیے ایک بار پھرغلط اقدام واضح ہے جس کی قیمت پوری دنیا کو بھگتنی پڑگئی ہے۔

امریکی صدر کا کہنا تھا کا اس صورتحال میں ادارے کے پاس ایک ہی راستہ ہے کہ وہ یہ ثابت کرے کہ وہ چین کی جانب سے آزاد ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خط میں مزید کہا کہ میری انتظامیہ پہلے ہی آپ سے اس پر بحث کرچکی ہے کہ ادارہ کس طرح بہتر کام کرسکتا ہے لیکن اس کے لیے تیز کام کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ ہمارے پاس وقت ضائع کرنے کا وقت نہیں۔

گزشتہ دنوں ٹرمپ یہ بھی کہہ چکے ہیں کہ وبا پرقابو پانے کے حوالے سے عالمی ادارہ صحت کی کارکردگی افسوسناک رہی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.