کراچی طیارہ حادثہ کی کہانی۔عینی شاہدین کی زبانی

لاہور سے کراچی آنے والا پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز کا ائیربس 320 طیارہ ائیرپورٹ کے قریب لینڈنگ سے چند لمحات قبل ماڈل ٹاؤن کے علاقے جناح گارڈن کے رہائشی علاقے میں گرکر تباہ ہوگیا جس میں 91 مسافر اورعملے کے 7 افراد سوار تھے۔

اطلاعات کے مطابق طیارہ گرنے سے پہلے بائیں جانب جھکا، پہلے طیارے کی دُم زمین سے ٹکرائی جس سے طیارےکا زور ٹوٹ گیا، اگلے حصے کی نشستوں کو دھچکا کم لگا اورکئی مسافر محفوظ رہے۔

طیارہ رہائشی مکانات پر گرا جس کی وجہ سے گھروں اور گلی میں کھڑی گاڑیوں میں آگ بھڑک اٹھی۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پائلٹ نے آبادی کو بچانے کی کوشش کی لیکن طیارے میں آگ بھڑکنے کے بعد وہ آبادی پر جاگرا ۔

متاثرہ علاقے میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں تاہم تنگ گلیوں کے باعث امدادی کارکنوں کو مشکلات کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ عینی شاہدین کے مطابق جائے حادثہ پر کئی مکانات ملبے کا ڈھیر بن چکے ہیں  جبکہ درجنوں مکانات کا نقصان پہنچا ہے۔

عینی شاہد کا کہناہے کہ لاشیں بری طرح جھلس چکی ہیں جو ناقابل شناخت ہیں،درجنوں افراد زخمی ہیں  جن زیادہ ترافراد جھلسے ہوئے ہیں،طیارے میں سوار دو افراد کے بچ جانے کی اطلاع ہے، جائے وقوع پرقیامت صغریٰ کا منظر ہے لوگ اپنے پیاروں کی تلاش میں فکرمند اورکسی معجزے کے منتظر ہیں،امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.