افتخارالدین ویڈیو از خود نوٹس کیس کی سماعت

سپریم کورٹ نے ڈائریکٹرجنرل (ڈی جی) وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کو طلب کرلیا۔

سپریم کورٹ میں افتخارالدین ویڈیو از خود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔عدالت نے ڈی جی ایف آئی اے کو آئندہ سماعت پر طلبی کا حکم دیتے ہوئے مولوی افتخارالدین مرزا کو بھی نوٹس جاری کر دیا۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ یہ سب کیا ہو رہا ہے ؟

اٹارنی جنرل نے مؤقف اختیار کیا کہ جج کی اہلیہ نے تھانے میں درخواست دی ہے جبکہ پولیس نے معاملہ ایف آئی اے کو بھیج دیا ہے۔اورایف آئی اے نے الیکٹرانک کرائم کے تحت کارروائی شروع کر دی ہے۔

چیف جسٹس گلزاراحمد نے اٹارنی جنرل سے مکالمہ کیا کہ کیا ایف آئی اے کچھ نہیں کر رہا؟ایف آئی اے کے پاس ججزکے دیگر معاملات بھی ہیں۔

جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیے کہ ویڈیو میں ملک کے ادارے کو دھمکی دی گئی ہے اور ادارے کے جج کا نام تضحیک آمیز انداز سے لیا گیا ہے۔ ریاستی مشینری نے ایکشن تاخیر سے کیوں لیا ؟

چیف جسٹس نے کہا کہ ایف آئی اے نے کسی معاملے پرنتائج نہیں دیے۔کیس کی سماعت 2 جولائی تک ملتوی کردی گئی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.