اپوزیشن جماعتوں کاوفاقی بجٹ مستردکرنےکااعلان

قومی اسمبلی میں اپوزیشن نے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے مالی سال 21-2020 بجٹ مسترد کردیا۔

بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ وفاقی بجٹ کےخلاف پوری قوم متحدہوگئی ہے جب کہ خواجہ آصف نے کہا کہ مشکل حالات میں عوام کوریلیف دینے کےبجائےان پرمزیدبوجھ ڈال دیاگیا۔

اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ تمام اپوزیشن جماعتوں نےوفاقی بجٹ کومسترد کر دیا ہے اور وفاقی بجٹ کےخلاف پوری قوم متحدہوگئی ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ مشکل حالات کے باوجودحکومت نے عوام پربوجھ ڈال دیاہے،مہنگائی میں پسی عوام پرکل پٹرول کی قیمت میں 25روپےاضافہ کردیاہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ شہبازشریف صحت یاب ہوجائیں توپھرآئندہ ہفتےاےپی سی بلائیں گے، آج کی اےپی سی میں صرف بجٹ پربات ہوئی، اگلی اےپی سی میں 18ویں ترمیم اور کورونا پر بات چیت ہوگی۔
پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر خواجہ آصف نے کہا کہ عمران خان قوم پربوجھ بن چکےہیں، اس حکومت سےجتنی جلدی ہوجان چھڑائی جائےتاکہ بچاکچا پاکستان بچ جائے، موجودہ حکومت کاآخری وقت آن پہنچاہے، عمران خان ملک کوتباہی کی طرف لےکر جا رہے ہیں۔ کورونا وبا معیشت کی بحالی کے دروازے بھی بند کر چکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کے انجام کا وقت آن پہنچا ہے، مشیرِ خزانہ کے بیان کے دو دن بعد عوام پر پیٹرول بم گرایا گیا۔خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ اپوزیشن جلد اس معاملے میں اپنا لائحہ عمل طے کرے گی۔

جماعت اسلامی کے رہنما میاں اسلم کا کہنا تھا کہ حکومت نے پٹرولیم قیمتیں بڑھا کرعوام کی جیبوں پر ڈاکا ڈالا ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ بجٹ محض الفاظ کا گورکھ دھندا ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنما اکرم درانی نے کہا کہ اس حکومت کی اپوزیشن کے ساتھ رویہ سب کے سامنے ہے ہم نے مشترکہ کوششیں کر کےاس حکومت سےچھٹکارا حاصل کرنا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.