آئی ایم ایف سے مذاکرات۔ وزیرخزانہ آج امریکا روانہ ہونگے

اسلام آباد:وزیر خزانہ شوکت ترین پیر11 اکتوبر کی رات قرض پروگرام کی بحالی کے لیے آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کے لیے امریکہ روانہ ہوں گے۔

وزارت خزانہ حکام کے مطابق وزیر خزانہ آئی ایم ایف کے ساتھ پالیسی سطح کے مذاکرات میں شرکت کریں گے جہاں وزیر خزانہ آئی ایم ایف کو معاشی صورت حال اور کارکردگی سے آگاہ کریں گے۔

مذاکرات کی کامیابی کی صورت میں ایک ارب ڈالر کی اگلی قسط ملنے کا امکان ہے۔ پاکستان کو 6ارب ڈالر کے قرض پروگرام میں سے 2ارب ڈالر پہلے ہی مل چکے ہیں۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات 13اکتوبر سے شروع ہوں گے اور مذاکرات تین دن تک جاری رہیں گے۔

واضح رہے کہ آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی کے لیے مزید ٹیکس لگانے سمیت کئی شرائط پیش کر چکا ہے، جمعے کے روز عالمی مالیاتی فنڈ نے پاکستان سے بجلی، انکم ٹیکس، سیلز ٹیکس اور اضافی ریگولیٹری عائد کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

آئی ایم ایف کا کہنا تھا کہ بجلی کی قیمت مزید ایک روپے 40 پیسے مہنگی کرے کیونکہ بجلی کی قیمت بڑھا کر ہی گردشی قرضے پر قابو پایا جاسکتا ہے۔

اس کے علاوہ انکم ٹیکس، سیلز ٹیکس اور ریگولیٹری ڈیوٹی حاصل کرنے کے لیے مزید اقدامات کرنا ہونگے تاکہ سالانہ محصولات کا ہدف 58 کھرب روپے سے بڑھ کر 63 کھرب روپے تک کیا جاسکے۔

آئی ایم ایف نے پاکستان سے مزید کہا کہ حکومت ہر طرح کی سبسڈی ختم کرئے یا اُس میں نمایاں کمی کرے اورایف بی آر ریونیو اکٹھا کرنے کے حوالے سے مزید اقدامات کرے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.