پنجاب اسمبلی کا اجلاس 6جون تک ملتوی کردیا گیا

لاہور: پنجاب اسمبلی کا ہنگامہ خیز اجلاس شروع ہوتے ہی 6 جون تک ملتوی کردیا گیا، ن لیگی ارکان کو اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کرنے کا موقع نہ مل سکا۔

قبل ازیں ن لیگی ارکان کو پنجاب اسمبلی میں داخل ہونے سے روک دیا گیا جس پر ن لیگ کے ارکان نے احتجاج کیا اور کہا کہ اسپیکر پرویز الٰہی کے حکم پر ارکان اسمبلی کو اندر داخل نہیں ہونے دیا جارہا۔ ن لیگی ارکان نے مرکزی دربار گیٹ کو زور زور سے بجایا، اسپیکراورسیکریٹری اسمبلی کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔ بعدازاں انہیں اسمبلی میں داخلے کی اجازت دی گئی ساتھ ہی کچھ صحافیوں کو بھی اندر جانے کی اجازت مل گئی۔

سوا دو بجے کے بعد پنجاب اسمبلی کا اجلاس پینل آف چیئرمین وسیم بادوزئی کی زیر صدارت شروع ہوا جس میں اسپیکر پنجاب اسمبلی کے خلاف قرارداد کا ذکر کیا گیا۔ مسلم لیگ نون اور اس کی اتحادیوں کی جانب سے غیر سنجیدہ رویے کے باعث عدم اعتماد پر بات نہیں کی گئی۔ پینل آف چیئرمین نے حکومتی اتحاد کی جانب سے عدم اعتماد پر جواب نہ ملنے پر عدم اعتماد کی تحریک نمٹا دی اور اجلاس محض 9 منٹ تک جاری رہنے کے بعد 6 جون تک ملتوی کردیا گیا۔

کسی بھی ن لیگی رکن کو تحریک عدم اعتماد پیش کرنے کے سببب اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد تکنیکی بنیادوں پر ختم ہوگئی۔