کراچی میں اچانک سیکورٹی ہائی الرٹ کیوں ؟

چینی باشندوں پر حملے کے بعد کراچی کے مختلف علاقوں میں اچانک سکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی، ذرائع کراچی پولیس چیف کے احکامات پر شہر کےمختلف اضلاع میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔
ان علاقوں میں جیل چورنگی، لسبیلہ، نمائش چورنگی، مزار قائد، طارق روڈ، لبرٹی چوک، جیل پارک، لال قلعہ، محمود آباد میں کارپوریشن گیٹ وغیرہ شامل ہیں جہاں سخت چیکنگ ہو رہی ہے
اس کے علاوہ اقراء یونیورسٹی، بہادرآباد، گلشن اقبال، اشفاق میموریل اسپتال، ڈسکو بیکری، ابو الحسن اصفہانی روڈ، سائٹ کے علاقے ،سپر ہائی وے انڈسٹریل ایریا میں بھی ناکہ بندی کی گئی ہے جہاں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے گاڑیوں کی تلاشی لے رہے ہیں۔
علاوہ ازیں سہراب گوٹھ، سپر ہائی وے سبزی منڈی، ڈیفنس ویو، نیو ٹاؤن، یونیورسٹی روڈ پر بھی پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔
ایس ایس پی ایسٹ عبدالرحیم شیرازی کا کہنا ہے کہ اسٹریٹ کرمنل اور جرائم پیشہ افراد کے خلاف مختلف علاقوں میں کامبنگ آپریشن کی بھی تیاری کی گئی ہے، جبکہ ڈسٹرکٹ ایسٹ کے مختلف علاقوں میں شاہین فورس بھی متحرک کر دی گئی ہے۔
ایس ایس پی ملیر عرفان بہادر کا کے مطابق 12 مقامات پر اسنیپ چیکنگ جاری ہے، نیشنل ہائی وے سمیت حساس مقدمات پر شاہین فورس کے جوان بھی تعنیات ہیں، جو مشکوک گاڑیوں، موٹرسائیکلوں پر سوار افراد کر رہے ہیں ، چیکنگ پوائنٹس پر مشکوک افراد پر نظر رکھی جارہی ہے، بائیو میٹرک ڈیوائس سے مشکوک افراد کا ریکارڈ چیک کیاجارہا ہے۔

پولیس حکام نے اپیل کی ہے کہ شہری کسی بھی مشکوک شخص کی اطلاع ون فائیو پر دیں، ان کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

اسمبلی توڑنےکااعلان

وزیراعلیٰ کے پی کے کا بھی عمران خان کے حکم پر اسمبلی توڑنےکااعلان

 ہم سب عمران خان کے ایم پی ایز ہیں، ملک کی حقیقی آزادی کے لیے عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں