بحیرہ عرب میں موجود ہوا کے کم دبائو کے باعث سمندری طوفان کا خطرہ 

محکمہ موسمیات کے ٹراپیکل سائیکلون وارننگ سینٹر نے بحیرہ عرب میں موجود ہوا کے کم دبائو کے حوالے سے الرٹ جاری کردیا۔ 

ٹراپیکل سائیکلون وارننگ سینٹر کے مطابق آئندہ 36 گھنٹوں کے دوران ہوا کا کم دبائو سمندری طوفان میں تبدیل ہوجائے گا،بحیرہ عرب میں بننے والا ہوا کا کم دباؤ ڈپریشن میں تبدیل ہوگیا ہے جبکہ  سمندری طوفان بننے کی صورت میں اسے ‘وایو’ کا نام دیا جائے گا۔

ڈپریشن کراچی کے جنوب میں 1500کلومیٹر دور،جبکہ بھارتی ساحل لکشادویو پرموجود ہے جہاں یہ سسٹم بارشیں برسا رہا ہے۔

ڈائریکٹر محکمہ موسمیات عبدالرشید کے مطابق ابتدائی طور پر سسٹم شمال اور شمال مغرب کی جانب بڑھ رہا ہے، جبکہ موجودہ صورتحال میں اس سسٹم سے پاکستان کے ساحلی علاقوں کو کوئی خطرہ نہیں۔

طوفان کا رخ کراچی کی ساحلی پر ہوگا یا نہیں یہ چار دن میں واضح ہوگا البتہ محکمہ موسمیات کی جانب سے سندھ کے ماہی گیروں کو احتیاط برتنے اور گہرے سمندر میں نہ جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

سائیکلون بننے اوراس کا رخ جنوب کی جانب ہونے کی صورت میں کراچی شہر میں گرمی کی شدت میں مذید اضافہ ہوسکتا ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ دو دن کے دوران پارہ 38 ڈگری سینٹی گریڈ کو چھو سکتا ہے، آئندہ دو دنوں میں گرمی کی شدت میں اضافہ جون میں پڑنے والی معمول کی گرمی ہے، نمی کا تناسب زیادہ ہونے کی صورت میں درجہ حرارت کی شدت زائد محسوس کی جائے گی۔