سری لنکا کی جانب سے پاکستان میں ٹیسٹ میچ کھیلنے سے انکار

سری لنکن کرکٹ بورڈ نے پاکستان میں ٹیسٹ سیریز کھیلنے سے انکار کر دیا ہے جس پر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے موقف دیتے ہوئے کہا ہے کہ سری لنکا نے باضابطہ طور پر کسی بھی فیصلے سے آگاہ نہیں کیا۔

سری لنکن کے وزیرکھیل نے کہا ہے کہ ان کی ٹیم رواں سال کے آخری میں ٹیسٹ سیریزکے بجائے مختصر دورانیے کے تین میچزکھیلنے کے لیے پاکستان کا دورہ کرے گی۔

گزشتہ ہفتے پاکستان میں سیکیورٹی کی صورتحال کا جائزہ لینے کےلیے سری لنکا کے سیکیورٹی وفد نے پاکستان کا دورہ کیا تھا جس کے حوالے کرک انفو نے بتایا تھا کہ سری لنکا کے سیکیورٹی وفد نے اپنے بورڈ کوانتہائی مثبت رپورٹ دی ہے جس کے بعد تمام چیزیں معمول کے مطابق ہونے پر پاکستان میں مارچ 2009 کے لاہورحملے کے بعد ٹیسٹ کرکٹ واپس آسکتی ہے۔

اُس وقت سری لنکن کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسرایشلے ڈی سلوا کا کہنا تھا کہ انہیں اپنی سیکیورٹی ٹیم کی جانب سے انتہائی مثبت رد عمل ملا جس کے بعد ٹیم بھیجنے سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ سے کچھ متبادل صورت پربھی بات کی جائے گی جب کہ اس حوالے سے حکومت سے بھی صلاح مشورہ کیا جائے گا۔

اب سری لنکا کے وزیرکھیل ہارین فرنینڈو کا کہنا ہے کہ پاکستان نے سری لنکا کو لاہوراورکراچی میں دوٹیسٹ میچز کھیلنے کی پیشکش کی تھی لیکن سری لنکا ٹیسٹ سیریز کے بجائے تین ون ڈے یا ٹی 20 سیریزکھیلنے کے لیے پاکستانی کا 8 روزہ دورہ کرے گی۔

سری لنکن وزیر نے مچوں کی حتمی تاریخ تو نہیں بتائی تاہم ان کا کہنا تھا کہ یہ دورہ رواں سال کے آخرمیں ہوگا۔