حکومت نوازشریف سے متعلق فیصلہ چیلنج نہیں کرے گی۔ذرائع

وفاقی کابینہ نے سابق وزیراعظم نوازشریف سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی بیرون ملک روانگی سے متعلق مشاورت ہوئی اوراس دوران کابینہ کے اراکین نے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا مشورہ دیا۔

ذرائع نے بتایا کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں یہ متقفہ طور پر فیصلہ کیا گیا ہےکہ حکومت لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج نہیں کرے گی۔

ذرائع کے مطابق کابینہ ارکان سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا اور پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ عدالتوں کے فیصلے کو من وعن قبول کریں گے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ نوازشریف کی بیرون ملک روانگی پرانڈیمنٹی بانڈ کی شرط ان کی واپسی کو یقینی بنانے کے لیے رکھی تھی کیونکہ اب عدالت نے ضمانت لے لی ہے تو ہم پرامید ہیں کہ نوازشریف عدالتی فیصلے کو مانیں گے اورعلاج مکمل کرنے کے بعد مقررہ وقت میں واپس آئیں گے۔

عمران خان نے مزید کہا کہ نوازشریف کو جانے کی اجازت اس لیے دی ہے کہ وہ اپنی مرضی کی جگہ اور ڈاکٹر سے علاج کرائیں تاکہ بروقت صحت یاب ہوں اور وطن واپس آکر اپنے خلاف مقدمات کا سامنا کریں۔

Comments (0)
Add Comment