میرے پاکستانیو! پھر کہتا ہوں گھبرانا نہیں

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بدعنوانی کے خاتمے کے لیے ای گورننس ناگزیر ہے۔ اداروں میں اصلاحات کی کوشش کرتے ہیں تومزاحمت ہوتی ہے مگراس پر قابو پالیں گے۔پی ٹی آئی حکومت کیلیے معاشی حالات بہتر بنانا بہت بڑا چیلنج تھا۔ پاکستان کے تمام ادارے خسارے میں تھے۔ حکومت نے کرنٹ اکائونٹ خسارے پر قابو پا لیا ہے۔

ڈیجیٹل میڈیا ویژن کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میری توجہ معیشت بہتر کرنے پر ہے۔ عالمی ادارے بھی اب پاکستان کی مثبت معاشی کارکردگی کا اعتراف کر رہے ہیں۔ میری توجہ معیشت بہتر کرنے پر ہے۔ ای گورننس سے عوام کی زندگیوں کوآسان بنائیں گے۔

وزیراعظم نے کہا کہ جب ڈالر لندن منتقل ہو رہے ہوں تو روپے پراثر پڑتا ہے۔ کرپشن ہمیشہ اوپر سے شروع ہوتی ہے۔ کرپشن اوپر سے شروع کرنے والے بیرون ملک چلے گئے۔ بدعنوانی کے خاتمے کے لیے ای گورننس ناگزیر ہے۔ ہمیں ڈیجیٹل پاکستان وڑن پر بہت پہلے توجہ دینی چاہیے تھی۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں پیسوں کی خاطر دوسروں کی جنگیں لڑی گئیں لیکن آج کا پاکستان امن کے لیے دوسرے ممالک کے مابین ثالث کا کردار ادا کر رہا ہے۔ ہم مسلم امہ کو اکٹھا کرنے میں ہم اپنا رول ادا کریں گے۔

عمران خان نے ایک مرتبہ پھر قوم کو اعتماد دلاتے ہوئے کہا کہ عوام گھبرائیں نہ، ملک کا مستقبل روشن ہے۔ زندگی کا مقصد طے کرنے والے لوگ ترقی کرتے ہیں اور مشکل فیصلے کرنے والے کامیاب ہوتے ہیں۔ آسان راستے ڈھونڈنے والوں کو مشکلات کا سامنا رہتا ہے۔ زندگی کا ہر روز آگے بڑھنے کا زینہ ہے۔ جس دن چیلنج ختم اس دن آپ کی زندگی ختم ہو جاتی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا ہے کہ میں نے عمر کا زیادہ تر حصہ بیرون ملک گزارا، میں سمندر پار پاکستانیوں کے مثبت رجحانات سے بخوبی واقف ہوں، زندگی کا مقصد طے کرنے والے لوگ ہی ترقی کرتے ہیں،مشکل فیصلے کرنے والے لوگ ہی کامیاب ہوتے ہیں،آج باہر کے ادارے ورلڈ بینک، آئی ایم ایف، ایشین ڈویلپمنٹ بینک کہہ رہے ہیں کہ پاکستان کی معیشت میں استحکام آ گیا ہے

وزیر اعظم نے کہاکہ  اب ہماری پوری توجہ ڈیجیٹل پاکستان پراجیکٹ پر ہو گی، ڈیجیٹل پاکستان پراجیکٹ ہماری یوتھ کو ہماری طاقت میں تبدیل کر سکتا ہے،خواتین بھی اس میں شامل ہوسکتی ہیں ،ہمیں اس منصوبے سے پورا فائدہ اٹھانا چاہیے۔

انہوں نے کہاکہ  ای گورننس سے کرپشن کا خاتمہ ہو گا، کرپشن ختم کرنے کا یہی سب سے بہترین طریقہ ہے،اداروں میں ای گورننس لانا چاہتے ہیں لیکن اس کے خلاف بڑی رکاوٹیں ڈالی جا رہی ہیں۔،پاکستان کا آنے والا دور خوش آئند ہے،بڑی تبدیلیاں آئی ہیں ۔