پرانے سیاستدانوں کو عوام کے اصل مسائل میں کوئی دلچسپی نہیں، فائل فوٹو
پرانے سیاستدانوں کو عوام کے اصل مسائل میں کوئی دلچسپی نہیں، فائل فوٹو

شیر تو بلی نکلا،بلاول بھٹو کی نون لیگ پر تنقید

دیر بالا: چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ نے کہا ہم پہلے سیاست میں مداخلت کرتے تھے، اب نہیں کریں گے جس کا پیپلز پارٹی نے خیر مقدم کیا۔ لاہور کے سیاست دانوں کا مسئلہ ہے کھیلیں گے نہ کھیلنے دیں گے۔

سابق وزیر خارجہ بلاول بھٹو نے دیر بالا میں ورکرز کنونشن سے خطاب میں کہا کہ معلوم نہیں لاہور کے بزرگ سیاست دان کے ارادے کیا ہیں۔ پرانے سیاست دان سیاسی مخالفت کو ذاتی دشمنی میں بدل چکے ہیں۔ وہ خود کام کرتے ہیں نہ کرنے دیتے ہیں۔

بلاول بھٹو نے ن لیگ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عوام نے مہنگائی لیگ کا چہرہ دیکھ لیا، مہنگائی کے سوا کچھ نہیں ملا، آپ نے مہنگائی لیگ کاچہرہ دیکھا شیر تو بلی نکلا، پرانے سیاستدان سیاسی مخالفت کو ذاتی دشمنی میں بدل چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب آپ کو پیپلز پارٹی کو موقع دینا پڑے گا، عوام مجھے ایک موقع دیں خیبر پختونخوا اور پاکستان کی قسمت بدل کر دکھاوں گا۔ پیپلز پارٹی نے ہر دور میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں اضافہ کیا۔ ہمیں اقتدار ملا تو تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہیں ڈبل کر دیں گے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ مہنگائی تاریخی سطح پر پہنچ چکی ہے، اسلام آباد کے حکمرانوں کو احساس نہیں کہ عوام کتنی تکلیف میں ہیں، نفرت اور تقسیم کی سیاست سے عوام کو نقصان ہو رہا ہے، بے روزگاری اور غربت میں اضافہ ہوتاجا رہا ہے، سنگین مسائل ہیں، مشکلات سے ہم سب کو نکلنا ہو گا۔

سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کی حکومت میں ہم ان تمام لوگوں کے ساتھ کیوں ملے تھے، ہم سمجھے کہ ہمارے اتحادی وہ ہیں جو ووٹ کی عزت کی بات کرتے ہیں، ہم نے اس لئے ان کا ساتھ دیاتھا کہ ملک کے معاشی مسائل حل ہوں، ہم پسماندہ علاقوں کی نمائندگی کرتے ہیں، کیا ان لوگوں نےغریبوں کو کوئی ریلیف دیا ہے، سندھ میں بے نظیر مزدور کارڈ کا پائلٹ پروگرام شروع کیا ہے۔

بلاول بھٹو نے اپر دیر میں 6 ماہ میں 500 بیڈز کا اسپتال بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ امید ہے کہ 8 فروری کوالیکشن ہوں گے، اور ہم کامیاب ہوں گے، مہنگائی لیگ نہ الیکشن جیتے گی نہ انہیں دوتہائی اکثریت ملے گی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ ابھی تک 18ویں ترمیم، این ایف سی ایوارڈ پر مکمل عملدرآمد نہیں ہورہا، ہم الیکشن جیت کر 18ویں ترمیم، این ایف سی ایوارڈ پر عمل کریں گے، بہت سی وزارتیں ایسی ہیں جو نہ خود کام کرتی ہیں نہ کرنے دیتی ہیں، وفاق میں موجود ان وزارتوں میں سالانہ 100ارب روپے خرچ ہوتا ہے، اگر پی پی کو حکومت ملی تو تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہ دگنا کر دے گی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ عمران خان کہتا تھا لوگ باہر سے پاکستان آکر نوکری کریں گے، آج این آئی سی وی ڈی میں ڈاکٹرز امریکا سے آکرکام کر رہے ہیں، نوازشریف کہتے ہیں بڑے لوگ آکر انویسٹ کر رہے ہیں،ان سے سوال نہ پوچھیں، میں ان لوگوں کو انویسٹ کرنے دوں گا مگر پوچھوں گا کتنا روزگار لوگوں کو دیتے ہو، سرمایہ کاروں سے پوچھوں گا مزدوروں کو محنت کا صلہ دے رہے ہو یا نہیں، سرمایہ کار مزدوروں کو حق نہیں دیں گے تو ان کے کاروبار کی کوئی ضرورت نہیں.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔