فائل فوٹو
فائل فوٹو

عام آدمی کو انصاف نہیں مل رہا وہ کس کو خط لکھے؟ طلال چوہدری

اسلام آباد: رہنما مسلم لیگ (ن) سینیٹرطلال چودھری نے کہا ہے کہ عام آدمی کوعدالتوں سے انصاف نہیں مل رہا وہ کس کو خط لکھے؟

نجی ٹی وی کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما طلال چوہدری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نان ایشو کو ایشو بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے، لیٹر کے بجائے نوٹس ہونے چاہئیں تھے۔

طلال چوہدری نے کہا کہ ضلعی عدلیہ نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کو لیٹر لکھا ہے، اگر کسی خط کا نوٹس ہونا چاہیے تو پہلے ضلعی عدلیہ پر ہونا چاہیے، یہ پارلیمنٹ، سیاست دانوں کی بھی ناکامی ہے، عدلیہ کو بہتر بنانے میں پارلیمان کو اپنا رول ادا کرنا چاہئے تھا۔رہنما ن لیگ نے مزید کہا کہ مظاہرعلی نقوی کو ڈس مس کیا گیا تاحال وہ اسی گھر میں رہ رہے ہیں، اعجازالاحسن نے چار لائنیں لکھیں اور اب پنشن بھی لیں گے، سزا اور جزا کا سسٹم عدلیہ کے اندر بہتر ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 62،63 پر پورا نہ اترنے والے ہی فیصلے کر رہے ہیں، ضلعی عدلیہ کا خط عام آدمی کے لیے بہت اہم ہے، عدلیہ پر کسی قسم کا پریشر نہیں ہونا چاہئے، وکلا جو پریشر ڈالتے ہیں وہ بھی پریشر ہے، عدلیہ کو تمام پریشرسے آزاد ہونا چاہیے۔

طلال چوہدری نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ کو سوموٹو لینا چاہئے، اگر ادارے اپنے نچلے اداروں میں انصاف نہیں کرتے تو پارلیمان کو سوموٹو لینا چاہیے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔