انٹر نیشنل کرکٹ میں ہر بار خود کو تبدیل کرنا ہوتا ہے: گیری

 

نیویارک (اُمت نیوز) پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ گیری کرسٹن نے کہا ہے کہ انٹر نیشنل کرکٹ میں ہر بار خود کو تبدیل کرنا ہوتا ہے، تمام کھلاڑی تجربہ کار ہیں، انہیں اندازہ ہے کیسے پرفارم کرنا ہے۔

نیویارک میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ گیری کرسٹن کا کہنا تھا کہ میرا نہیں خیال کہ نیویارک کی وکٹ خطرناک تھی، ایک دو جگہ شارپ باؤنس تھا لیکن وہ مسئلہ نہیں، سلو آؤٹ فیلڈ کی وجہ سے یہاں بڑا ٹوٹل نہیں ہونا تھا۔

گیری کرسٹن کا کہنا تھا کہ میرے خیال میں 140 یہاں اچھا سکور ہوتا ، بھارت کو اس سے کم میں روکا تھا، کرکٹ صرف چوکوں، چھکوں کا نام نہیں، 120 کا ٹوٹل بھی دلچسپ ہو سکتا ہے، اگر آپ نے اپنا گیم بہتر نہیں کیا تو آپ لمبا نہیں کھیل پائیں گے۔

ہیڈ کوچ پاکستان ٹیم کا کہنا تھا کہ انٹر نیشنل کرکٹ میں ہر بار خود کو تبدیل کرنا ہوتا ہے، بھارت کیخلاف ہدف کے تعاقب میں ابتدائی 15 اوورز میں ہم اچھا کھیلے، ایسا ہی ہمارا پلان تھا، وکٹیں گرنے کے بعد رنز بننا رکے اور ہم دباؤ میں آگئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔