ٹک ٹاکر عائشہ اکرم نے مرضی سے قابل اعتراض ویڈیوز بنوائیں۔پولیس حکام

لاہور:پولیس حکام نے دعوی کیا ہے کہ ٹک ٹاکر عائشہ اکرم نے اپنی مرضی سے قابل اعتراض ویڈیوز بنوائیں، پیکا ایکٹ کے تحت ریمبو اور عائشہ کو 7 سال سزا ہو سکتی ہے۔

گریٹراقبال پارک دست درازی کیس، ٹک ٹاکر عائشہ اکرم کے گرد بھی گھیرا تنگ ہو گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ عائشہ اکرم نے اپنی مرضی سے قابل اعتراض ویڈیوز بنوائیں جس پر عائشہ کیخلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پولیس کے مطابق مرضی سے اخلاق سوز ویڈیوز بنوانا اور سوشل میڈیا پر وائرل کرنا جرم ہے، پیکا ایکٹ کے تحت ریمبو اور عائشہ کو 7 سال سزا ہو سکتی ہے۔

واضح رہے کہ مینار پاکستان کے دست درازی کیس میں اس سے قبل بھی عائشہ اوراس کے ساتھی ریمبو کی آڈیو لیک ہوئی تھی جس میں دونوں کے مابین جیل میں شناخت ہونے والے ملزمان سے رقم لینے کی گفتگو سامنے آئی ہے۔

ٹیلی فون کال میں ریمبو نے عائشہ سے سوال کیا کہ مجرم 6 ہیں یا 7۔ اس پر جواب دیتے ہوئے عائشہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ 6 مجرم ہیں۔ جس پر ریمبو نے کہا کہ فی مجرم کتنے پیسے لیے جائیں زیادہ ترغریب ہیں۔ اس پر عائشہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ مشکل سے انہوں نے پانچ پانچ لاکھ کرنا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.