بی آر ٹی پشاور۔ زیر تعمیر ٹوائلٹس منشیات کے عادی افراد کا اڈہ بن گئے

بی آر ٹی پشاور منصوبے کے افتتاح کے 5 ماہ بعد بھی اس کے کئی سٹیشنز زیر تعمیر ہیں، تاحال بیت الخلا بھی نہ بن سکے، منصوبے کے لیے آمدن کا ذریعہ بننے والے کمرشل پلازے  بھی مکمل نہ ہوسکے۔باتھ رومز میں واٹر اینڈ سینیٹریشن کا سامان نصب نہ ہونے کی وجہ سے خالی باتھ رومز گندگی کے ڈھیر میں تبدیل ہو چکے ہیں، اسٹیشنز پر موجود باتھ رومز کے نام پر خالی کمرے شام ہوتے ہی منشیات کے عادی افراد کا اڈہ بن گئے ہیں۔

بی آر ٹی پشاورکا افتتاح 13اگست 2020کو وزیراعظم عمران خان نے کیا تھا۔5 ماہ سے زائد کا عرصہ گزرگیا مگر بیشتر بس اسٹیشنز پر مسافروں کے لیے تاحال باتھ رومز تک نہیں بن سکے ہیں۔ منصوبہ کی آمدن میں اضافہ کے لیے تین کمرشل پلازے بھی تعمیر ہونا تھے جو ابھی تک نامکمل ہیں۔

دوسری جانب ڈی جی پی ڈی اے کا کہنا ہے کہ کنٹریکٹرزکے ساتھ درپیش مسائل کی وجہ سے تعمیراتی کام رکا ہوا تھا جو آئندہ 20 سے 25 دن میں دوبارہ شروع کر دیا جائے گا، باتھ رومز اور کمرشل پلازوں کا کام جلد مکمل کیا جائے گا۔

تبصرے بند ہیں.