پاکستانی خواتین میں موٹاپے کی شرح بڑھ گئی۔پاکستانی 428 ارب روپے موٹاپا کم کرنے پر خرچ کرتے ہیں

پاکستان میں سالانہ 428 ارب روپے موٹاپے سے متعلق بیماریوں پر خرچ کیئے جاتے ہیں۔2011ء سے 2018ء تک خواتین میں موٹاپے کی شرح 28 سے بڑھ کر 38 فیصد ہوئی۔

پاکستان نیشنل ہارٹ ایسوسی ایشن نے موٹاپے سے متعلق رپورٹ جاری کر دی ہے ، جس میں کہا گیا ہے کہ ملک میں سالانہ 428 ارب روپے موٹاپے سے متعلق بیماریوں پر خرچ کیئے جاتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان میں روزانہ 2200 افراد غیر متعدی امراض کی وجہ سے انتقال کر جاتے ہیں۔ کم عمر کے 40 فیصد بچے کمزوری کا شکار ہیں جبکہ 41 فیصد سے زائد بالغ افراد زیادہ وزن والے یا موٹے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں 2011ء سے 2018ء تک خواتین میں موٹاپے کی شرح 28 سے بڑھ کر 38 فیصد ہوئی۔ گزشتہ 7 سال میں پاکستانی بچوں میں موٹاپے کی شرح دگنی ہو گئی ہے۔

رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ میٹھے مشروبات دل کی بیماریوں، موٹاپے اور ذیا بیطس کی ایک بڑی وجہ ہیں۔ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ عالمی سطح پر پاکستان اس وقت ذیابیطس میں چوتھے نمبر پر ہے۔

تبصرے بند ہیں.