ذکااشرف نے چیف ایگزیکٹو آفیسرکا عہدہ غیر ضروری قرار دیدیا

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے سابق چیئرمین ذکااشرف نے بورڈ کی موجودہ پالیسیوں پر عدم اعتماد کا اظہارکرتے ہوئے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) کے عہدے کو غیر ضروری قرار دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق ایک انٹرویو میں ذکاءاشرف نے کہا کہ بورڈ میں تمام اختیارات چیئرمین کے پاس ہونے چاہئیں، احسان مانی کی موجودگی میں وسیم خان کے چیف ایگزیکٹیو ہونے سے معاملات کبھی درست طریقے سے نہیں چل سکتے، حکومت نے احسان مانی کو اگر بورڈ کا سربراہ بنایا ہے توپھرتمام اختیارات اور فیصلے بھی ان کے ہی ہونے چاہئیں، چیف ایگزیکٹیو کو اختیارات دینے سے دونوں بڑوں کے درمیان اختلافات سننے کو مل رہے ہیں۔

ذکا اشرف نے کہا کہ ڈیپارٹمنٹل کرکٹ کے خاتمے سے پاکستان کرکٹ کا معیار مزید نیچے جارہا ہے، بہت سے کھلاڑی بے روزگار ہوکرکرکٹ چھوڑنے پر مجبور ہیں، ان حالات میں پاکستان کو مستقبل کیلیے اچھا ٹیلنٹ ملنا بہت مشکل ہو جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ٹیم میں گروپنگ لگ رہی ہے، پی سی بی کو چاہیے کہ مصباح اور محمد عامرکے درمیان اختلافات جلد سے جلد ختم کرائے، مصباح بہت اچھے کپتان تھے لیکن ان کو دو عہدے ہرگز قبول نہیں کرنے چاہیے تھے۔

تبصرے بند ہیں.