سارہ کیسے قتل ہوئی؟ رونگٹےکھڑےکردینے والے انکشافات

شوہر کے ہاتھوں بے دردی سے قتل ہونے والی سینئر صحافی ایاز میر کی بہو سارہ کے قتل کے حوالے سے ہولناک انکشافات سامنے آئے ہیں ۔۔
ذرائع کے مطابق ملزم شاہ نواز امیر نہ صرف کئی گھنٹے اس پر لاتوں اور مکوں سے تشدد کرتا رہا بلکہ بعد میں ایکسرسائز کے لیے استعمال ہونے والے ڈمبل اٹھا لایا اور سارہ کے جسم کے مختلف حصوں پر ضربیں لگاتا رہا۔

جب سر پر لگنے والی شدید چوٹ سے سارہ کی موت واقع ہوگئی تو ملزم اسے بیڈ روم سے گھسیٹ کر واش روم تک لے گیا جہاں اس نے باتھ ٹب میں لاش رکھ کر شاور کھول دیا تاکہ اس سے رسنے والا خون دھویا جا سکے ۔بعض ذرائع کے مطابق ملزم سارہ کو بے ہوشی کی حالت میں واش روم لے گیا تھا جہاں اس نے شاور کھول دیا ۔تاہم پولیس اس حوالے سے تفتیش کر رہی ہے۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ مبینہ طور پر ملزم کی والدہ گھر پر موجود تھیں تاہم انہوں نے اس سارے واقعے کے حوالے سے پولیس کو آگاہ نہیں کیا۔ لڑائی جھگڑے ،تشدد اور مار پیٹ کے بعد یہ سلسلہ موت پر منتج ہوا اور اس سارے عمل میں کئی گھنٹے گزر گئے۔ اس دوران قریب کے رہائشی افراد نے پولیس کی پیٹرولنگ ٹیم کو بتایا کہ اس فارم ہاؤس سے شور شرابہ اور رونے دھونے کی آوازیں آ رہی تھیں ۔بعض ذرائع کا دعوٰی ہے کہ پولیس قاتل کی والدہ کی اطلاع پر آئی تاہم اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

ذرائع کے مطابق پولیس فارم ہاؤس میں داخل ہوئی تو ملزم شاہنواز بیڈروم سے خون کے نشانات دھو رہا تھا۔ پولیس نے اسے جائے واردات سے گرفتار کرلیا اور ملزم نےاعتراف جرم بھی کرلیا۔

یہ بھی دیکھیں

یہ پیغام عمران خان اور پی ٹی آئی کیلیے ہے ۔فائل فوٹو

اسحاق ڈار کی نااہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں دائر درخواست واپس

درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ہائی کورٹ سے رجوع کرنا چاہتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔